کراچی میں پولیس کی موجودگی میں قتل

فائل فوٹو

فائل فوٹو

کراچی کے علاقے بہادرآباد میں گھریلو تنازع پر سہیل نامی شخص نے پولیس کی موجودگی میں فائرنگ کرکے مُنور نامی شہری کو قتل کردیا۔

سہیل کا موقف ہے کہ اِس کے بیوی بچوں کو مُنور نے اپنے گھر میں حبسِ بے جا میں رکھا تھا۔

 پولیس کا کہنا ہے کہ عدالت نے منور کی گرفتاری کا حکم دیا تھا تاہم سہیل نے گرفتار کرنے سے پہلے ہی منور کو فائرنگ کرکے قتل کردیا۔

قاتل سہیل مغل نے دعویٰ کیا کہ  اس کی بیوی اور تین بیٹیوں کو حبس بے جا میں رکھا گیا ہے۔بہادرآباد میں منور نامی شخص کے ہاں اس کے بیوی بچے موجود ہیں۔

سہیل درخشاں تھانے پہنچا اور ساری کہانی سنائی۔پھر ایڈیشنل ایس ایچ او راجہ تنویر کے ہمراہ بہارآباد کے علاقے شرف آباد پہنچا۔

پولیس موبائل سے نکل کر منور کے گھر گیااور پولیس کی موجودگی میں منور کوباہر بلا کر فائرنگ کردی۔

پولیس کا موقف ہے کہ مقتول منور علی کو عدالتی حکم پر گرفتار کیا جانا تھا۔تاہم سہیل مغل نے پولیس موبائل سے نکل کر منور علی پر گولیاں برسا دیں۔

پولیس نے سہیل مغل کو جائے واردات سے گرفتار کرکے پستول ضبط کر لیا۔

جبکہ نیو ٹاؤن پولیس نے ایڈیشنل ایس ایچ او درخشاں سمیت چار اہلکاروں کو حراست میں لے کر واقعہ کی تحقیقات شروع کردی۔

loading...
loading...