جمال خاشقجی قتل: ترکی نے آڈیو ٹیپ امریکہ کے حوالے کردی

Jamal

انقرہ: ترکی نے جمال خاشقجی کے قتل سے متعلق آڈیو ٹیپ سعودی عرب اور امریکا سمیت کئی ممالک کے حوالے کر دی ہیں، دیگر ملکوں میں برطانیہ، جرمنی اور فرانس شامل ہیں۔ ترک صدر رجب طیب اردوان نے اپنے اس موقف کو ایک بار پھر دہرایا ہے کہ سعودی عرب کو معلوم ہے جمال خاشقجی کو کس نے ہلاک کیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ وہ جمال خاشقجی کے قاتلوں کو منظر عام پر لانے کی ہر ممکن کوشش بروئے کار لائیں گے، تاہم ترک صدر نے ٹیپ میں موجود گفتگو کے حوالے سے تفصیلات ظاہر نہیں کیں۔

سعودی عرب نے ابتدا میں صحافی جمال خاشقجی کے سعودی قونصلیٹ میں مرنے کی تردید کی تھی تاہم بعد میں ہلاکت کی تصدیق کردی تھی۔ جمال خاشقجی کو دو اکتوبر کو استنبول میں سعودی قونصلیٹ میں قتل کر دیا گیا تھا۔


loading...
loading...