قومی اسمبلی میں لفظی گولہ باری سے ماحول خراب

nationalimage

قومی اسمبلی کے اجلاس میں حکومت اور اپوزیشن اراکین کی لفظی گولہ باری نے ایوان کا ماحول خراب کردیا۔

صوبوں کو پانی کی تقسیم کے معاملے پر وزیر آبی وسائل فیصل واوڈا نے مسلم لیگ ن کی حکومت کو چور کہا تو جواب میں شاہد خاقان عباسی نے طنز کیا اور کہا حکومت میں شامل لوگوں کی دیانتداری خوب جانتا ہوں۔ ایک دوسرے کے خلاف استعمال ہونے والی ناشائستہ زبان نے ایوان کو مچھلی منڈی بنا دیا۔

عجب پارلیمنٹیرینز کی غضب بول چال،معزز پارلیمان میں غیر پارلیمانی زبان کے استعمال سے چور۔ ڈاکو۔ بدعنوان اور کرپٹ حکمران اور اس جیسے کئی الزام پارلیمان میں گونجتے ہوئے نظر آئے۔

ایوان میں سندھ اور بلوچستان کے پانی چوری کا معاملہ اٹھا تو فیصل واوڈا نے نواز حکومت کو چور قرار دیدیا۔ فیصل واوڈا کے الزام پر شاہد خاقان عباسی نے کرارا جواب دیا۔

جواب میں فیصل واوڈا نے کہا ن لیگ دور میں چوری اور ڈاکے ڈالے گئے، دونوں کے تندو تیز جملوں نے ایوان کے ماحول کو مزید بھڑکا کر رکھ دیا۔

loading...
loading...