سپریم کورٹ کا قبضہ گروپ منشا بم کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم

File Photo

File Photo

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے قبضہ گروپ منشا بم کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دیدیا۔پی ٹی آئی ممبر قومی اسمبلی کرامت کو غلط بیانی اور ندیم عباس بارا کو معاونت کرنے پر نوٹس جاری کرتے ہوئے کل اسلام آباد طلب کرلیا۔ 

سپریم کورٹ رجسٹری لاہور میں جوہر ٹاؤن کے 9 پلاٹوں پر قبضے کیخلاف شکایت پر سماعت ہوئی۔

ایس پی صدر معاذ ظفر نے کہا کہ انہیں قبضہ گروپ کے سرغنہ ملک منشا بم کی

گرفتاری سے کرامت کھوکھر نے روکا۔ عدالت نے کرامت کھوکھر کو طلب کیا تو انکے ساتھ ایم پی اے ندیم عباس بھی چلے آئے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ پی ٹی آئی نے کب سے بدمعاشی شروع کردی؟ کیا نیا پاکستان بدمعاشوں کی مدد کرکے بناؤ گے؟ کیا لوگوں نے بدمعاشی کے لیے ووٹ دیے ہیں؟ 

چیف جسٹس نے کہا کہ اگر ثابت ہوا تو ملک کرامت کھوکھر بطور ایم این اے واپس نہیں جاؤ گے، کھوکھر نے کہا کہ ایس پی کو نہیں ڈی آئی جی کو فون کیا تھا۔

ندیم عباس بارا سے عدالت نے استفسار کیا کہ وہ کیوں آئے؟ ندیم عباس نے کہا کہ وہ غلطی سے عدالت آگئے۔

جس پر چیف جسٹس نے حکم دیا کہ وہ بھی پیر کو کرامت کھرکھر کے ساتھ اسلام آباد آئیں، وہاں دیکھا جائے گا کہ معافی دینی ہے یا نہیں۔اور اپنے ساتھ استعفا بھی ضرور لائیں۔

اسی دوران پی ٹی آئی ایم پی اے ندیم عباس بارا نے رونا شروع کردیا جس پر چیف جسٹس نے کہا باہر بدمعاشی کرتے ہو عدالت میں رونا شروع کردیتے ہو۔ ندیم عباس نے کہا کہ ان کی غلطی ثابت ہوئی تو استعفا دے دیں گے۔

چیف جسٹس نے کہا تم لوگوں میں اتنی جرات نہیں کہ استعفا دیدو، عدالت نے پولیس کو حکم دیا کہ ملک منشا عرف بم کو گرفتار کرکے عدالت کے روبرو پیش کیا جائے۔

loading...
loading...