آپ کے چھینے گئے موبائل کے ساتھ کیا کِیا جارہا ہے؟

streetcrimeimage

کراچی: شہر میں جرائم کی شرح میں حد درجہ اضافہ ہوا ہے، روزانہ کئی شہری اسٹریٹ کرمنلز کے ہاتھوں اپنے موبائل فونز اور قیمتی اشیاء سے محروم ہورہے ہیں۔ جن میں سے کچھ ڈکیتیوں کی رپورٹ تو درج کروا دی جاتی ہے، جبکہ کچھ چھینے گئے موبائل فون پر صبر کر لیتے ہیں۔ لیکن وہ نہیں جانتے کہ ان کے موبوئل فون کے ساتھ کیا کیا جارہا ہے۔

پولیس کے ہاتھوں گرفتار ملزم فیضان نے دوران تفتیش انکشافات کیا ہے کہا کہ چوری یا چھینے گئے موبائل فونز کو ثابت  بیچا نہیں جاتا، بلکہ انہیں اسپئیر پارٹس کی سورت میں بیچ دیا جاتا ہے۔

ملزم کا کہنا ہے کہ موبوئل فونز اسپیئر پارٹس کی صورت میں بکنے سے ٹریس نہیں ہوتے۔

ملزم کا مزید کہنا تھا کہ حالات بہتر ہونے کی وجہ سے چوری کیے گئے موبائل فونز کا کاروبار متاثر ہوا ہے، منشیات کے اڈوں پر چوری کیے گئے موبائل فونز کم قیمت میں بیچے جاتے ہیں۔

ملزم نے بتایا کہ اس کے 2 ساتھی کامران اور اختر فرار ہیں۔ دوسری جانب پولیس کا کہنا ہے کہ ملزمان 4 ماہ سے چوری کیے گئے موبائل فونز فروخت کررہے تھے۔

loading...
loading...