سپریم کورٹ میں ڈی پی او پاک پتن تبادلہ ازخود نوٹس سماعت کیلئے مقرر

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:سپریم کورٹ نے ڈی پی او پاک پتن تبادلہ ازخود نوٹس سماعت کیلئے مقرر کردیا،17ستمبر کو آئی جی کی انکوائری رپورٹ پر عدالتی کارروائی ہوگی۔

ڈی پی او پاک پتن تبادلہ ازدخود نوٹس میں آئی جی کی رپورٹ میں کیا کچھ پتا چلا، اس کا سپریم کورٹ جائزہ لے گا،چیف جسٹس ثاقب نثار نے مقدمہ 17ستمبر کو سماعت کیلئے مقرر کردیا۔

سپریم کورٹ کی جانب سے خاور مانیکا، سابق آئی جی پنجاب کلیم امام،ایڈووکیٹ جنرل پنجاب، آر پی او ساہیوال، ڈی پی او رضوان گوندل اور احسن جمیل گجر کو نوٹسز جاری کردیئے ہیں۔

وزیراعلیٰ پنجاب کے پی ایس او، سی ایس اور ڈی آئی جی ہیڈ کوارٹرز کو بھی نوٹسز جاری کئے گئے۔

رضوان گوندل کے تبادلے سے متعلق آئی جی کلیم امام 27صفحات پر مشتمل رپورٹ عدالت میں پیش کرچکے ہیں جبکہ عدالت میں اے آئی جی انویسٹی گیشن ابوبکرخدا بخش کی رپورٹ بھی جمع کرائی گئی۔

loading...
loading...