قوم کے بہادر سپوت راشد منہاس شہید کا یوم شہادت

minhas

نشان حیدر پانے والے سب سے کم عمر پائلٹ راشد منہاس شہید کا سینتالیس واں یوم شہادت آج منایا جارہا ہے۔

سترہ فروری 1951 کو کراچی میں پیدا ہونے والے راشد منہاس اپنے ماموں ونگ کمانڈر سعید سے متاثر ہوکر 1968 میں پاک فضائیہ میں شامل ہوئے۔

13مارچ 1971 کو بطور کمیشنڈ جی ڈی پائلٹ پی اے ایف مسرور بیس پر پوسٹنگ ہوئی۔

اس وقت کسی کو اندازہ نہ تھا کہ یہ نوجوان پائلٹ ارضِ پاک کیلئے قربانی کی لازوال داستان رقم کردے گا۔

20اگست 1971 کو راشد منہاس تیسری تنہا پرواز کیلئے T-33 جیٹ سے روانہ ہونے لگے۔

تو انسٹرکٹر کے روپ میں ملک دشمن مطیع الرحمان نے طیارہ اغوا کرکے بھارت لے جانے کی کوشش کی۔

مزاحمت کے بعد راشد منہاس نے طیارے کا رخ زمین کی جانب موڑ دیا۔

طیارہ بھارتی سرحد سے صرف بتیس میل پہلے ٹھٹھہ میں گرگیا۔

اور راشد منہاس نے نہ صرف ملک دشمن کے عزائم کو خاک میں ملایا، بلکہ شہادت کے زندہ و جاوید رتبے پر فائز بھی ہوئے۔

اس کارنامے پر راشد منہاس کو سب سے بڑا فوجی اعزاز نشانِ حیدر دیا گیا۔

loading...
loading...