دو ہزار ساٹھ تک بدین، سجاول اور ٹھٹھہ سمندر برد ہوجائیں گے

235557-Recovered

ٹھٹھہ: دریائے سندھ میں پانی نہ ہونے سے سمندر مزید علاقے کو نگل رہا ہے۔ میٹھے پانی کی مقدار کم ہونے کے باعث آبی حیات کو بھی خطرہ لاحق ہے۔

آبی  ماہرین کے مطابق اگر کوٹری ڈاؤن اسٹریم میں پانی نہیں چھوڑا گیا تو دو ہزار ساٹھ تک بدین، سجاول اور ٹھٹھہ سمندر برد ہوجائیں گے۔

  کوٹری ڈاؤن اسٹریم میں تازہ پانی نہ چھوڑے جانے کی وجہ سے یہ دریا ٹھٹھہ، بدین اور کراچی کی پینتیس لاکھ ایکڑ زمین سمندر نگل چکا ہے اور مسلسل شہر کی طرف بڑھ رہا ہے۔ تازہ پانی کا رساؤ نہ ہونے سے دریائے سندھ تباہی کی طرف گامزن ہے۔

 دریائے سندھ کو پاکستان میں نمایاں مقام حاصل ہے۔ یہ دریا تبت سے ایک جھیل مانسرور کے قریب سے شروع ہوتا ہے۔

 اس کے بعد دریائے سندھ لداخ اور گلگت بلستان سے گزرتا ہوا صوبہ خیبر پختونخوا میں داخل ہوتا ہے ،جہاں اسے اباسین یعنی دریاؤں کا باپ بھی کہا جاتا ہے۔

 دریائے سندھ ماضی میں اپنی بے مثال موجوں کی وجہ سے دنیا بھر میں مشہور تھا لیکن اب یہ خود پانی  کو ترس رہا ہے۔

loading...
loading...