پولیس معاملے کی طے تک پہنچنے کی کوشش ہی نہیں کرتی،سپریم کورٹ

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:سپریم کورٹ نے پروین رحمان قتل کیس کی تحقیقات خراب کرنے والے پولیس افسران پر برہمی کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ پولیس معاملے کی طے تک پہنچنے کی کوشش ہی نہیں کرتی۔

بدھ کو جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3رکنی بینچ نے سماجی کارکن پروین رحمان قتل کیس میں جوڈیشل کمیشن کی تشکیل سے متعلق درخواست پر سماعت کی۔

جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیئے پولیس اپنی ناکامی چھپانے کی کوشش کررہی ہے، قاتل اب تک کیوں نہیں پکڑے گئے؟ ۔

پولیس نے مؤقف اپنایا کہ واقعے میں 5ملزموں کو گرفتار کیا، ایک نے اعتراف جرم بھی کیا،جس پر جسٹس گلزار احمد نے اظہار برہمی کیا اور پوچھاکیا پولیس کا کام اب اعتراف جرم پر چلتا ہے؟ ،کیا پولیس کو تحقیقات نہیں کرنا پڑتی۔

جسٹس عظمت سعید بولے جس ملزم نے اعتراف جرم کیا ٹرائل کورٹ میں اُسی نے انکاربھی کیا،پولیس معاملے کی طے تک پہنچنے کی کوشش ہی نہیں کرتی۔

جسٹس گلزار نے کہا سندھ پولیس کو تحقیقات کرنا نہیں آتیں، تحقیقات سکھانے کیلئے کسی جگہ بھیجیں۔

عدالت نے اٹارنی جنرل اورایڈووکیٹ جنرل سندھ کوذاتی حیثیت میں طلب کرتے ہوئے سماعت دوہفتے کیلئے ملتوی کردی۔

loading...
loading...