پرویز مشرف کی وطن واپسی کی مہلت ختم ہونے میں 5گھنٹے باقی

فائل فوٹو

فائل فوٹو

لاہور:سپریم کورٹ کی جانب سے سابق صدر جنرل (ر)پرویز مشرف کووطن واپسی کیلئےدی گئی مہلت ختم ہونے میں 5گھنٹے باقی رہ گئے۔

گزشتہ روز سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں سابق صدر پرویز مشرف واپسی کیس کی سماعت ہوئی۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے پرویز مشرف کو آج  دوپہر 2بجے تک وطن واپس آنے کی مہلت دیتے ہوئے ریمارکس دئیے کہ اگر مشرف آج  تک نہ پہنچے تو پھر قانون کے مطابق فیصلہ کریں گے۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ عدالت واپسی کیلئے مشرف کی شرائط کی پابند نہیں، کہہ چکے ہیں تحفظ دیں گے لکھ کر گارنٹی دینے کے بھی پابند نہیں،اتنا بڑا ملک ٹیک اوور کرتے وقت خوف نہیں آیا،اب کس بات کا خوف ہے؟مشرف واپس آئیں قانون،عوام اور عدلیہ کا سامنا کریں۔

پرویز مشرف کے وکیل نے عدالت کو بتایا پرویز مشرف کو رعشہ کی بیماری ہے،بغاوت کے مقدمے کا سامنا کرنے کو تیار ہیں،جان کے تحفظ کی ضمانت دی جائے۔

جس پر چیف جسٹس نے کہا مشرف ایئر ایمبولینس میں آجائیں ہم میڈیکل بورڈ بنا دیتے ہیں۔

چیف جسٹس کا یہ بھی کہنا تھا سپریم کورٹ نے پرویز مشرف کو بیرون ملک جانے کی اجازت نہیں دی، واضح کرتا ہوں یہ اجازت حکومت کی جانب سے دی گئی تھی،سپریم کورٹ کے فیصلے کو غلط انداز سے بیان کیا گیا۔

loading...
loading...