پرویز مشرف کی بہادری پر ہے کہ وہ واپس آتے ہیں یانہیں،چیف جسٹس

فائل فوٹو

فائل فوٹو

لاہور:چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے سماعت کے دوران ریمارکس دیئے ہیں کہ پرویز مشرف کو پاکستان آنے میں جو رکاوٹ تھی وہ ختم کردی اب ان کی بہادری پر ہے کہ وہ واپس آتے ہیں یا نہیں۔

منگل کو چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثارکی سربراہی میں جسٹس عمر عطا بندیال اور جسٹس اعجازالحسن سمیت 3 رکنی بینچ نے اصغر خان کیس پر عمل درآمد کیس کی سماعت کی۔

اس موقع پر جاوید ہاشمی، میر حاصل بزنجو، عابدہ حسین، غلام مصطفیٰ کھر اور ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن، اسد درانی، روئیداد خان سمیت دیگر عدالت میں پیش ہوئے۔

چیف جسٹس نے کیس کی تحقیقات مکمل کرنے کیلئے وزارت دفاع سمیت تمام اداروں کو ایف آئی اے سے تعاون کرنے کا حکم دے دیا۔

انہوں نے ریمارکس دیئے کہ اس عدالت کے دائرہ میں کسی ایجنسی کا کوئی زور نہیں، اصغر خان عمل درآمد کیس میں مزید تاخیر برادشت نہیں کریں گے، ایک منٹ ضائع کیے بغیر تفتیش مکمل کی جائے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ پرویز مشرف کو پاکستان آنے میں جو رکاوٹ تھی وہ ختم کردی، اب ان کی بہادری پر ہے کہ وہ آتے ہیں یا نہیں۔

یاد رہے گزشتہ روز سپریم کورٹ نے پرویز مشرف کا پاسپورٹ اور شناختی کارڈ بحال کرنے کا حکم دیا تھا، سماعت کے دوران چیئرمین نادرا نے بتایا کہ پرویز مشرف کی وطن واپسی شناختی کارڈ کے بلاک ہونے کی وجہ سے ممکن نہیں۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ہم نے پرویز مشرف کو واپسی کیلئے تحفظ دیا تھا، شناختی کارڈ بلاک کر کے کیوں واپسی روکنے کا عذر پیدا کر رہے ہیں۔

loading...
loading...