پاناما پیپرزلیک سے متعلق جان ڈو کا بیان

فائل فوٹو

فائل فوٹو

.لندن:پاناما پیپرزلیک کرنے والے جان ڈوکا بیان سامنے آگیا، اُن کاکہنا ہے کہ وہ قانون نافذ کرنے والےاداروں کی مدد کرنے کو تیار ہیں تاہم وہ کسی حکومتی یا خفیہ ایجنسی کیلئے کام نہیں کرتے۔

برطانوی میڈیا کے مطابق جان ڈو نے بتایا کہ ایک سال تک دستاویزات کی جانچ پڑتال ہوتی رہی، ان کاکہناتھا کہ آئی سی آئی جےنے 83 ممالک میں 100 میڈیااداروں کوڈیٹاتک رسائی دی۔تاہم جرمن اخبار نے یہ دستاویزات آئی سی آئی جے کو فراہم کیں۔

جان ڈو نے واضح کیا کہ آئی سی آئی جےنےحکومتوں اوراداروں کوفائلوں تک رسائی دینےسےانکارکردیا، جوکہ ایک درست فیصلہ ہے۔

جان ڈو نے مزید بتایا کہ تفصیلات میں آف شور کمپنیوں کے مالکان کی تفصیل، پاسپورٹ کی کاپیاں اور ای میلزاکاؤنٹس بھی شامل ہیں۔

اُن کایہ بھی کہنا ہے کہ ‘پاناماپیپرزنےثابت کیاکہ کاغذی کمپنیوں کوسنگین جرائم کیلئےاستعمال کیا جاتا ہے’۔

ان کمپنیوں کو بالعموم ٹیکس چوری کے جرم میں ملوث بتایا جاتا ہے۔

جان ڈو نے واضح کیا کہ ‘امریکی کانٹریکٹرایڈورڈسنورڈن سزانہیں انعام کے حقدارہیں،جنہوں نے انتہائی اہم کام کیا ہے’۔