نیب ریفرنسز:نواز شریف کی 2ہفتے کیلئے حاضری سے استثنیٰ کی درخواست

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:سابق وزیراعظم نواز شریف نے احتساب عدالت میں نیب ریفرنسز کی سماعت میں 2ہفتے کیلئے حاضری سے استثنیٰ کی درخواست کردی۔

منگل کو اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے شریف خاندان کے خلاف نیب ریفرنسز کی سماعت کی ،جس میں سابق وزیراعظم نوازشریف، ان کی بیٹی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر) صفدر پیش ہوئے۔

سابق وزیراعظم نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث احتساب عدالت میں پیش نہ ہوئے جس کے باعث طلب کئے گئے استغاثہ کے 4 گواہوں کے بیانات بھی قلمبند نہ ہوسکے۔

نوازشریف اور مریم نواز نے حاضری سے 2ہفتے کے استثنیٰ کی درخواست کردی،جس  میں مؤقف اختیار کیا گیاکہ اہلیہ کی عیادت کیلئے برطانیہ جانا ہے جس کے باعث  19 فروری سے 2ہفتے کیلئے دیا جائے۔

سماعت کے دوران نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ گواہ آرہے ہیں مگر شہادتیں ریکارڈ نہیں ہورہیں، ہر سماعت پر کوئی نہ کوئی بہانہ کیا جا رہا ہے۔

مریم نواز کے وکیل امجد پرویز نے کہا کہ کبھی سماعت میں التواء نہیں مانگا، عدالت کے استفسار پر نیب پراسیکیوٹرنے کہا کہ ویڈیو لنک پربیان 22 فروری کو ریکارڈ کر لیں تاہم مریم نواز کے وکیل نے کہا انہیں انتظامات کیلئے 15 دن کا وقت دیں۔

عدالت نے غیرملکی گواہوں کے ویڈیو لنک پر بیانات 22 فروری کو لینے کا حکم دے دیا۔

احتساب عدالت نے شریف خاندان کے خلاف ریفرنسوں کی سماعت 15 فروری تک ملتوی کردی۔