نواز شریف اور مریم نواز کی عدلیہ مخالف تقاریر نشر کرنے پر پابندی عائد

فائل فوٹو

فائل فوٹو

لاہور:لاہور ہائیکورٹ نے مسلم لیگ (ن) کے تاحیات قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کی عدلیہ مخالف تقاریر نشر کرنے پر عبوری پابندی عائد کردی۔

عدلیہ کیخلاف زہرافشانی پر عدلیہ کا فیصلہ آگیا،لاہور ہائیکورٹ نے عدلیہ مخالف تمام تقاریر کو فی الحال روک دیا۔

پیر کوجسٹس مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں لاہور ہائیکورٹ کے 3 رکنی بینچ نے نواز شریف اور مریم نواز سمیت 16 اراکین اسمبلی کیخلاف عدلیہ مخالف تقاریر کی درخواستوں کی سماعت کی۔

عدالت نے تمام متفرق درخواستوں پر فیصلہ کرنے کیلئے پیمرا کو 15روز کی مہلت دیتے ہوئے حکم  دیا کہ اس دوران عدلیہ مخالف کوئی بھی تقریر نشر نہ کی جائے۔

پیمرا کو اس حوالے سے تمام ٹی وی چینلز کی خود نگرانی کرنے کا بھی حکم دیا گیا۔

لاہورہائیکورٹ نے عدالتی دائرہ اختیار کیخلاف نوازشریف کی درخواست بھی مسترد کردی۔

عدلیہ مخالف تقاریر کیس میں نوازشریف اور مریم نواز سمیت 16لیگی اراکین کو فریق بنایا گیا تھا۔

درخوا ست میں مؤقف اپنایا گیا تھا کہ پاناما کیس فیصلے کے بعد نوازشریف اور دیگر لیگی رہنما مسلسل عدلیہ مخالف تقاریر کررہے ہیں۔

loading...
loading...