نواز شریف اورشہباز شریف کے خلاف توہین عدالت کی درخواستیں خارج

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:سپریم کورٹ نے سابق وزیراعظم نوازشریف، وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اورکیپٹن (ر) صفدر کے خلاف توہین عدالت کی درخواستیں خارج کردیں۔

منگل کو چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3رکنی بینچ نے نوازشریف، شہباز شریف اورکیپٹن (ر) صفدر کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کی۔

سماعت کے دوران درخواست گزارکے وکیل نے مؤقف اختیارکیا تھا کہ پانامافیصلے کے بعد نوا زشریف عدالتی تضحیک کرتے رہے ہیں ،شہباز شریف نے بیان دیا کہ ملک میں ججز جرنیلوں نے انصاف نہیں کیا۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے ہیں کہ یہ بات تو سچ ہے کہ جو بیانات عدالت کے بارے میں آرہے ہیں وہ ہمارے پاس موجود ہیں،جو بیانات آرہے ہیں وہ جے آئی ٹی سے متعلق ہیں جن کا مناسب وقت پر  ریمارکس پر کیس سنیں گے۔

چیف جسٹس نے اپنے ریمارکس میں مزید کہا کہ اس ملک کے ساتھ کسی نے انصاف نہیں کیا،ہم نے حقیقی معنوں میں اپنی ذمہ داریاں ادا نہیں کیں،اگر ذمہ داریاں ادا کی جاتیں تو آج یہ حالات نہ ہوتے۔

عدالت نے درخواست واپس لینے کی بنیاد پر نوازشریف، شہبازشریف، کیپٹن (ر) صفدر کی توہین عدالت کی درخواست کردی۔

سپریم کورٹ نے دانیال عزیز ،طلال چوہدری،خواجہ سعد رفیق ،نیئر بخاری،فردوس عاشق اعوان،   بینظیر بھٹو،یوسف رضا گیلانی اور پرویز مشرف کے خلاف دائر کی گئی درخواستیں بھی خارج کردیں۔

دوسری جانب عمران خان کے خلاف توہین عدالت کی درخواست دائر کرنے والے حشمت حبیب نے کیس چلانے پر اصرار کیا جس پر عدالت نے درخواست  دوبارہ سماعت کیلئے مقررکرنے کی ہدایت کردی ۔

loading...
loading...