ملکی زرمبادلہ کے ذخائر کم ترین سطح پر

dollarsimage

پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر تین سال کی کم ترین سطح پر ہیں ، پاکستانی قرضوں کا حجم آئی ایم ایف بیل آوٹ پیکیج کی گھنٹیاں بجارہا ہے۔

 برطانوی جریدے بلوم برگ کا کہنا ہے  مالی مشکلات کے پیش نظر آئندہ مالی سال پاکستان کو نو ارب ڈالر  سے زائد  غیر ملکی قرضہ  لینا پڑے گا۔ برطانوی جریدے بلوم برگ کی رپورٹ کے مطابق پاکستان کی مالی ضرورت ایمرجنگ ملکوں میں سب سے زیادہ ہے۔

مالی سال  دوہزار تیرہ  سے بیرونی قرض اور واجبات بڑھ کر  بانوے ارب ڈالر ہوچکے ہیں ۔ زرمبادلہ کے ذخائر  تین سال کی کم ترین سطح پر ہیں، گرتے ذخائر کے سبب روپے کی قدر دو مرتبہ کم کی گئی۔

بلوم برگ کےمطابق پاکستان کی معاشی صورتحال گزشتہ سال تک بہتر تھی، جس کی وجہ معاشی نمو، سستےخام تیل،آئی ایم ایف پیکیج اور چینی سرمایہ کاری  تھی، تاہم  مشینری اور دیگر سامان کی درآمد نے جاری خسارہ  پچاس فیصد بڑھا دیا۔ جو آئی ایم ایف سے مزید نئے قرضے  کی گھنٹی بجا رہا ہے۔

پاکستان کو آئندہ مالی سال  ساڑھے  نو ارب ڈالر کے غیر ملکی قرضے کی ضرورت ہوگی۔

loading...
loading...