مقبوضہ کشمیر: 8سالہ بچی زیادتی کے بعد قتل، ملزمان کو بچانے کیلئے بی جے پی سرگرم

اجتماعی زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی آٹھ سالہ آصفہ بانو-فائل فوٹو

اجتماعی زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی آٹھ سالہ آصفہ بانو-فائل فوٹو

مقبوضہ کشمیر میں اجتماعی زیادتی کے بعد آٹھ سال کی ننھی آصفہ کو قتل کردیا گیا۔ملزمان کو بچانے کیلئے حکمراں جماعت اور انتہا پسند ہندو سرگرم ہوگئے۔جبکہ واقعے کے خلاف بھارت کے اندر بھی  آوازیں اٹھ رہی ہیں۔

مقبوضہ کشمیر میں آٹھ سال کی بچی آصفہ کو اجتماعی زیادتی کے بعد قتل کردیا گیا۔

پولیس کے مطابق ملزم سنجے رام نے اپنے بھتیجے کی مدد سے یہ  گھناؤنا جرم کیا۔

 ملزمان نے کٹھوعہ سے  ننھی آصفہ کو اغوا کے بعدمندر کے تہہ خانے میں قید رکھا۔ کئی بار زیادتی کا نشانہ بنایا اور بعد میں قتل کرکے لاش کھائی میں پھینک دی۔

اس جرم میں پولیس اہلکاروں نے بھی ملزمان کا ساتھ دیا۔رشوت لے کرشواہد چھپادیےاورثبوت مٹادیے۔

پولیس کے مطابق ملزم سنجے رام نے بتایا کہ اس  گھناؤنے جرم  کامقصدمسلمانوں کوعلاقے سے خوفزدہ کرکے نکالنا تھا۔

مقبوضہ کشمیر میں ننھی آصفہ کے ساتھ درندگی کے خلاف خود بھارت میں آوازیں اٹھ رہی ہیں۔

فلمی ستارے ،سماجی کارکن  اور عام شہری  بول رہے ہیں۔جسٹس فار آصفہ کے نام سے ہیش ٹیگ بھارت میں ٹوئٹر پر مقبول ٹرینڈ بھی بن گیا ہےلیکن مودی  کی حکمراں جماعت  بھارتیا جنتا پارٹی اور انتہا پسند ہندو ملزمان کو بچانے کیلئے مظاہرے کررہے ہیں۔

loading...
loading...