مسلمانوں کی تاریخی بابری مسجد کی شہادت کو 25برس گزرہوگئے

فائل فوٹو

فائل فوٹو

ایودھیا: مسلمانوں کی تاریخی بابری مسجد کی شہادت کو 25برس گزرگئے،ہزاروں ہندو انتہا پسندوں کے مکروہ اقدام پر آج بھارت میں مسلم برادری یوم سیاہ منارہی ہے۔

بھارتی شہر ایودھیا میں 6دسمبر 1992ہندو جنونیوں نے بربریت کی انتہا کردی،ہزاروں انتہا پسند ہندوؤں نے تاریخی بابری مسجد کو شہید کردیا،جس کے بعد بھارت میں ہندو مسلم فسادات پھوٹ پڑےجو ہزاروں جانوں کے ضیاع کا سبب بھی بنے۔

بابری مسجد 16ویں صدی کا عظیم شاہکار تھاتاہم 1928 کو انتہا پسند ہندوؤں نے شوشہ چھوڑا کہ بابری مسجد دراصل رام کی جنم بھومی کو منہدم کرکے تعمیر کی گئی،1949میں بابری مسجد کو متنازع قرار دیکر بند کروادیا گیااور پھر 6دسمبر1992 میں ظلم کی انتہا ہوئی،جنونی ہندوؤں نے مسجد کو شہید کردیا۔

واقعے  کو 25برس گزرنے کے باوجود آج مسلم برادری مسجد کی شہادت پر یوم سیاہ منارہی ہے۔

دوسری جانب بھارتی سپریم کورٹ نے بابری مسجد رام مندر مقدمے کی حتمی سماعت شروع کردی ہے ،سپریم کورٹ کا آئینی بینچ مقدمے کی سماعت روزانہ بنیاد پر کرے گا۔

اس سے قبل 2010 میں آلہ آباد کی ہائیکورٹ نے متنازع زمین کو مقدمے کے ایک مسلم اور 2 ہندو فریقوں میں برابر تقسیم کرنے کا حکم بھی دیا تھا۔