قومی اسمبلی : فوجی عدالتوں کے معاملے پر بحث جاری

File Photo

File Photo

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں فوجی عدالتوں سے متعلق بل پر گرما گرم بحث جارہی ہے، پییلزپارٹی کے نوید قمر کہتے ہیں تنقیدی تقریر کرنے والے کل اسکی حمایت میں ووٹ بھی دیں گے۔

قومی اسمبلی کے اجلاس کا آغاز ہوا تو حکومت کی جانب سے اٹھائس ویں آئینی ترمیم اور فوجی عدالتوں سے متعلق بل پیش کیا گیا۔ اسپیکر نے ایوان میں بحث کا آغاز کرایا تو پیپلزپارٹی کے رہنما نوید قمر نے مجوزہ ترمیم کو شرمناک قرار دیدیا۔

نوید قمر بولے کہ اس سے آئین اور سول اداروں پر سے عوام کا اعتماد اٹھ جائے گا، ہر کام فوج کے حوالے کیوں کیا جا رہا ہے ، ایسا لگ رہا ہے کہ دوسال بعد بھی حالات نہیں بدلیں گے۔

تحریک انصاف کے شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ حکومتی کوتاہی کی وجہ سے ملٹری کورٹس میں توسیع ہونے جا رہی ہے، عدالتوں کے حوالے سے مذہبی اور سیاسی جماعتوں کے تحفظات کو دور ہونا چاہیے۔

محمود خان اچکزئی بولے کہ کوئٹہ دھماکے کے بعد سپریم کورٹ کمیشن کی رپورٹ میں ذمہ دار اداروں کا تعین کیا گیا ہے، فوجی عدالتوں کے بل کی حمایت کی تو یہ اعلی عدلیہ کے ججوں پر عدم اعتماد ہوگا۔