قصورواقعے کے3روزگزرنے کے بعد بھی شہر میں کشیدگی تاحال برقرار

فائل فوٹو

فائل فوٹو

قصور: قصور میں معصوم بچی زینب کے سفاکانہ قتل واقعے کے 3روز گزرنے کے بعد بھی شہر میں کشیدگی تاحال برقرار ہے، مارکیٹیں تو کھول گئیں مگر تعلیمی ادارے بند ہیں۔

قصور میں کم سن زینب کے ساتھ ہونے والے  دردناک واقعے کو 3روز گزرگئے مگر شہر کے باسیوں کا غم و غصہ کم نہ ہوسکا،جس کے باعث شہر بھر میں کشیدہ صورتحال تاحال برقرار ہے۔

آج بھی مظاہرین کی بڑی تعداد ڈسٹرکٹ اسپتال کے باہر موجود ہے،جہاں کسی بھی خطرے کے پیش نظر پولیس کی بھاری نفری بھی موجود ہےجبکہ رینجرز کے دستے بھی کشیدہ صورتحال کے پیش نظر قصور پہنچ گئے ہیں۔

مشتعل مظاہرین کو کنٹرول کرنے کیلئےبکتربند گاڑیاں پہنچا دی گئی ہیں۔

دوسری جانب گزشتہ رات ضلعی انتظامیہ کی جانب سے تاجروں کے ساتھ ہڑتال ختم کرانے کیلئے مذاکرات کئے گئے جہاں انصاف کی یقین دہانی پر تاجروں نے ہڑتال ختم کرنے کا اعلان کردیا ہےمگر سکول انتظامیہ تعلیمی اداروں میں ہڑتال کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے،آج بھی نجی وسرکاری تعلیمی ادارے بند پڑے ہیں۔

وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے واقعے کی تحقیقات کیلئے جے آئی ٹی بنائی اور واقعے میں ملوث ملزم کی گرفتاری کیلئے 24گھنٹے کی ڈیڈ لائن بھی دی مگرسفاکیت کا کھیل کھیلنے والے درندے 3روز گزرنے کے باوجود قانون کی گرفت میں تاحال نہ آ سکے۔