سپریم کورٹ میں دہری شہریت سے متعلق کیس کی سماعت

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:سپریم کورٹ میں دہری شہریت سے متعلق کیس کی سماعت میں ایڈشنل سیکرٹری دفاع نے بتایا کہ  راحیل شریف کوجی ایچ کیواوروزارت دفاع نے این اوسی جاری کیا ۔

منگل کو سپریم کورٹ میں چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں دہری شہریت سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی،سیکریٹری دفاع اورایڈیشنل سیکرٹری دفاع عدالت میں پیش ہوئے۔

ایڈشنل سیکرٹری ڈیفنس نے مؤقف اپنایا کہ جرنل (ر)راحیل شریف کوجی ایچ کیواوروزارت دفاع نے این اوسی جاری کیا ۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئےکہ این اوسی صرف کابینہ جاری کرسکتی ہے،یہ اختیارکسی اورکونہیں دیا جاسکتا اس معاملے کوآنے والی کابینہ کوبھیجا جائےتاکہ اسے ضابطے کے مطابق کردیا جائے۔

جسٹس اعجازالاحسن نے کہاکہ شجاع پاشا کا تحریرجواب آیا ہے،جس میں کہا گیا انہوں نے متحدہ عرب امارات میں کوئی ملازمت اختیارنہیں کی۔

سپریم کورٹ نے کہاکہ فوج میں کوئی دہری شہریت والا بھرتی نہیں ہوسکتا۔

جس پراڈیشنل سیکریٹری دفاع نے مؤقف اپنایاکہ عدالت کے حکم کے مطابق دہری شہریت کا معاملہ فوج اپنے طورپردیکھ رہی ہے ۔

loading...
loading...