سپریم کورٹ :مشرف کے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کی اجازت واپس

فائل فوٹو

فائل فوٹو

لاہور:سابق صدر جنرل (ر)پرویز مشرف نے وطن واپسی کیلئے سپریم کورٹ سے مہلت مانگ لی،عدالت نے مہلت کی استدعا منظور کرتے ہوئے پرویز مشرف کے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کی اجازت واپس لے لی۔

جمعرات کو سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف  جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 4رکنی بینچ نے پرویز مشرف کی طلبی سے متعلق کیس کی سماعت کی،پرویز مشرف کی جگہ ان کے وکیل قمر افضل عدالت کے روبروپیش ہوئے۔

چیف جسٹس نے ڈپٹی اٹارنی جنرل سے استفسار کیا کہ پتہ کریں پرویز مشرف آرہے ہیں یا نہیں کیونکہ عدالتی عملے کو بھی عید الفطر کی چھٹیوں پر جانا ہے۔

سابق صدر کے وکیل نے عدالت کے روبرو مؤقف اختیا کیا کہ ان کی پرویز مشرف سے بات ہوئی ہے اور انہوں نے پیش ہونے کیلئے مہلت مانگی ہے، وہ پاکستان آنے کا ارادہ رکھتے ہیں لیکن عید کی تعطیلات اور موجودہ حالات کے پیش نظر سفر نہیں کر سکتے، پرویز مشرف نے استدعا کی ہے کہ عدالت انہیں پاکستان آنے کی مہلت دے۔

عدالت نے وکیل کی استدعا تو منظور کرلی مگر پرویز مشرف کےکاغذات نامزدگی منظور کرنے کا حکم واپس لے لیا۔

چیف  جسٹس نے ریمارکس دیئےکہ کہ ٹھیک ہے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کرتے ہیں،آپ جب کہیں عدالت تب لگا لیں گے،واپسی تک کاغذات منظورنہیں ہوں گے۔

اس سے پہلے آل پارٹی مسلم لیگ کے ترجمان ڈاکٹر امجد کسی بھی پل مشرف کی آمد کی اطلاعات دیتے رہے، اور انتظار کرواتے رہے۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے  سابق صدر پرویز مشرف کو آج دوپہر 2 بجے تک عدالت میں پیش ہونے کی مہلت دی تھی۔

loading...
loading...