سندھ ہائیکورٹ میں آنکھیں بند کرکے حکم امتناع دیئے جارہے ہیں،چیف جسٹس

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:سپریم کورٹ میں ادویات کی قیمتوں سےمتعلق کیس میں چیف جسٹس ثاقب نثارریمارکس دیئے ہیں کہ سندھ ہائیکورٹ میں آنکھیں بند کرکے حکم امتناع دیئے جارہے ہیں۔

بدھ کو سپریم کورٹ میں چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں ادویات کی قیمتوں سے متلعق کیس کی سماعت ہوئی،سماعت کے دوران سندھ ہائیکورٹ کی جانب سے حکم امتناع دینے پر چیف جسٹس برہم ہوگئے۔

چیف جسٹس نے کہاکہ بڑے بڑے وکیل چیمبرمیں جاکرحکم امتناع لے آتے ہیں،سندھ ہائیکورٹ آنکھیں بند کرکے حکم امتناع بانٹ رہی ہے،کسی کوخداکاخوف نہیں،قانون کومعطل کردینا سندھ ہائیکورٹ کا کمال ہے

چیف جسٹس نے سندھ ہائیکورٹ کو 15روز میں حکم امتناع کی درخواستوں پر فیصلہ کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہاکہ سندھ ہائیکورٹ فیصلہ نہیں کرے گی توحکم امتناع ختم کردیں گے۔

چیف جسٹس نے کہاکہ ہائیکورٹ میں کام نہیں کرنا تووظیفہ اورپنشن لیں اورگھرجائیں۔

چیف جسٹس نے مزید کہاکہ صحت اورادویات کے معاملات جنگی بنیادوں پرچلنے چاہئیں، ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی میں تبدیلی ہوچکی ہے تاہم وہ کیا کریں عدالت حکم امتناع دے رہی ہے۔

 سپریم کورٹ نے سندھ ہائیکورٹ میں ادویات سے متعلق ریکارڈ طلب کرلیا،تمام فریقین کونوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت غیرمعینہ مدت کیلئے ملتوی کردی  ۔

loading...
loading...