جی 7 میں روس کی واپسی پر عالمی طاقتیں اختلاف کا شکار

Untitled-1

اوٹاوا: جی سیون اجلاس میں امریکی صدر ٹرمپ نے خطاب کرتے ہوئے روس کی واپسی کی  تجویز دی،جس کے بعد جی سیون اجلاس میں عالمی رہنما اختلافات کا شکار ہوگئے۔ 

جرمنی فرانس،جاپان،کینیڈا،برطانیہ،اٹلی اورامریکا تجارت،امریکی اتحادیوں پرمحصولات اورروس کے معاملے پر دنیا کے بڑے ایک نہ ہوسکے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جی سیون میں روس کی واپسی کی تجویز دی

ساتھ ہی کہا محصولات سے متعلق فیصلے پر تناؤ کے باوجود دیگر ممالک کے سربراہوں سے بات چیت چیت سود مند رہی۔

دوسری طرف اس فیصلے پر امریکی اتحادی برہم ہیں، کینیڈین وزیراعظم جسٹس ٹریڈو نے امریکی اتحادیوں پردرآمدی ٹیکس عائد کرنے کو ٹرمپ کا “فرسٹ امریکی ” ایجنڈا قراردیا۔

برطانوی وزیراعظم ٹریزامے نے بھی امریکی تجویز کی مخالفت کی اور روس پرپابندیوں کو برقراررکھنے پرزور دیا۔

ادھراطالوی وزیراعظم نے جی سیون اجلاس میں روسی شرکت کی حمایت کی۔

گیوسپے کونٹے کا کہنا تھا کہ عالمی بحرانوں کے حل کیلئے روس کی شرکت ضروری ہے۔

جی سیون گروپ میں روس کی رکنیت دوہزارچودہ میں معطل کردی گئی تھی۔

loading...
loading...