جمہوریت میں اہم ہے ہم کسی کام میں دخل اندازی نہ کریں،چیف جسٹس

فائل فوٹو

فائل فوٹو

کراچی:چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے کہا ہے کہ ہم مقننہ نہیں اس لئے ہم قانون سازی نہیں کرسکتے اور جمہوریت میں اہم ہے ہم کسی کام میں دخل اندازی نہ کریں۔

کراچی میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے چیف جسٹس نے کہا کہ قانون بنانا اور اصلاحات کرنا پارلیمنٹ کا کام ہے، انصاف میں تاخیر ایک بہت بڑا مسئلہ ہے، لوگوں کو ملک میں سستا انصاف ملنا چاہیے، ہمیں بخوبی اندازہ ہے زیر التوا کیس کے فیصلے کے وسائل نہیں۔

ہم ایک کوشش کرسکتے ہیں کہ قانونی دائرے اور موجودہ ججز کے ساتھ ہر جگہ قانون کے مطابق جلد کام کریں، ماتحت عدالتوں میں مقدمات کے بروقت فیصلے سے اعلیٰ عدلیہ پر بوجھ کم پڑے گا۔

انہوں نے کہا کہ عدالتی اصلاحات کی مہم کو تیز کرنا ہے، مقدمات تیزی سے نمٹانے کا براہ راست فائدہ سائلین کو ہوگا۔

جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا کہ دنیا میں لوگ عدالت میں جانے کے ڈر سےمسئلہ خود حل کرتے ہیں لیکن پاکستان میں معاملہ عدالت لیجانے پر لوگ خوش ہوتے ہیں کہ عدالت میں دیکھ لوں گا، جلد انصاف کی فراہمی کیلئے مجھے سب سے اچھا کام پنجاب میں نظر آیا ہے، پنجاب میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کو بروئے کارلایا گیا ہے اور ماڈل کورٹس بنائی گئی ہیں۔

چیف جسٹس نے کہا کہ ہم کس دور میں جی رہے ہیں؟ پنجاب کے علاوہ پاکستان میں کہیں بھی معیاری فرانزک لیب نظرنہیں آئی، کروڑوں روپے کی پراپرٹی زبانی طور پر ٹرانسفر کردی جاتی ہے۔