بھارتی سپریم کورٹ نےبابری مسجد کیس کا فیصلہ سنادیا

فائل فوٹو

فائل فوٹو

ممبئی:بھارتی سپریم کورٹ نےبابری مسجد کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے  بی جی پی کے رہنما ایل کے ایڈوانی اور منوہر جوشی سمیت  دیگر رہنماؤں  پر فرد جرم عائد کردی ہے۔

بابری مسجد کو 6دسمبر 1992میں انتہا پسندوں ہندوؤں نے شہید کیا،انتہا پسندوں نے بی جے پی رہنما  ایل کے ایڈوانی کی قیادت میں بابری مسجد کو شہید کرنے کی مہم چلائی تھی۔

بابری مسجد کیس  پر آج بھارتی سپریم کورٹ میں سماعت ہوئی، سماعت میں  بھارتی حکمراں جماعت بی جے پی کے رہنما ایل کے ایڈوانی ، منوہر جوشی،اوما بھارتی اور دیگر پر فرد جرم عائد کردی گئی ہے۔

سپریم کورٹ کا کہنا ہے کہ    روزانہ کی بنیادوں پر لکھنو عدالت میں  کیس کی سماعت ہوگی جسے 2سال میں مکمل کرنے کا حکم جاری کردیا گیا ہے۔

اس سے  قبل بھارتی ریاست اترپردیش کی عدالت ایل کے ایڈوانی سمیت درجنوں افراد  کو سازشی چارجز سے بری کرچکی ہے۔