العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس:خواجہ حارث کی واجد ضیاء پر جرح

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:احتساب عدالت میں العزیزیہ اسٹیل ملزریفرنس کی سماعت میں سابق وزیراعظم نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث کی پاناما جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیاء پر جرح جاری ہے۔

منگل کو احتساب عدالت کے جج محمد بشیر مسلم لیگ (ن) کے قائد نوازشریف کیخلاف العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس کی سماعت کر رہے ہیں۔

سابق وزیراعظم نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث جے آئی ٹی سربراہ واجد ضیاء پر جرح  کررہے ہیں۔

نیب پراسیکیوٹر سردارمظفرعباسی نے کہا کہ جو دستاویزعدالتی ریکارڈ کا حصہ نہیں اس پرجرح کیوں کررہے ہیں۔

واجد ضیاء نے سماعت کے دوران عدالت کو بتایا کہ عبداللہ قائد اہلی اورطارق شفیع پارٹنرتھے، پروفیشنل لائسنس کی 2016 میں تصدیق کرائی۔

جے آئی ٹی سربراہ نے کہا کہ پروفیشنل لائسنس کی نوٹری پبلک دبئی کورٹ سے تصدیق کرائی گئی، پاکستان قونصل خانے نے بھی پروفیشنل لائسنس کی تصدیق کی اورپروفیشنل لائسنس پرایڈریس، ای میل ، فون نمبرواضح تھا۔

استغاثہ کے گواہ نے عدالت کو بتایا کہ قطری شہزادے کو لکھا اپنے خط کی تصدیق کے لیے متعلقہ ریکارڈ لے آئیں، ہمیں کوئی شک نہیں کہ حماد بن جاسم نے خط نہیں لکھے۔

دوسری جانب نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر)صفدر کیخلاف ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت آج دن 2 بجے ہوگی جہاں مریم نواز کے وکیل امجدپرویز اپنے حتمی دلائل کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔

خیال رہے کہ احتساب عدالت نے 29 جون کو شریف خاندان کیخلاف ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت کے دوران العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس میں جے آئی ٹی سربراہ واجد ضیاء کو 3 جولائی کو طلب کیا تھا۔

loading...
loading...