ادارے عمارتوں سے نہیں شخصیات سے بنتے ہیں،چیف جسٹس

فائل فوٹو

فائل فوٹو

چارسدہ:چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کا کہنا ہے کہ ادارے عمارتوں سے نہیں شخصیات سے بنتے ہیں جبکہ اب عدلیہ کے کام کرنے کا وقت آگیا ہے۔

جمعے کو چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نےچارسدہ میں جوڈیشل کمپلیکس کا افتتاح کردیا۔

اس موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس نے کہا کہ چارسدہ کا جوڈیشل کمپلیکس دنیا کےاعلیٰ ترین کمپلیکس میں سے ہے ، اس کی تعمیر میں شریک تمام افراد مبارکباد کے مستحق ہیں ۔

ان کا کہنا تھا کہ عدلیہ کے کام کرنے کا وقت آگیا ہے، اب عدلیہ کو ڈلیور کرنا ہے، انصاف کی فراہمی عبادت اور اہم فریضہ ہے تاہم انصاف میں تاخیر کی وجہ نئے قوانین کا نہ بننا ہے جبکہ ادارے عمارتوں سے نہیں شخصیات سے بنتے ہیں۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ جن لوگوں کو کئی دہائیوں سے انصاف نہیں ملا انہیں کیا جواب دوں گا، سپریم کورٹ میں آج بھی دہائیوں کے مقدمات زیر التوا ہیں، ایسے کیسز سن رہا ہوں جو 1985 میں دائر ہوئے تھے۔

انہوں نے مزید کہا کہ وقت آگیا ہےکہ اپنے بچوں اور قوم کیلئے قربانی دینا ہوگی ،بچوں کو تعلیم کی فراہمی ریاست کی بنیادی ذمہ داری ہے،لوگوں کو ان کے بنیادی حقوق دلانے کیلئے آپ کا تعاون چاہیے،میں کسی بھی جگہ آپ کے حقوق کیلئے حاضر ہونے کو تیارہوں ۔

loading...
loading...