مسٹر بین کے انتقال کی خبر: ہزاروں لوگوں کا نقصان ہوگیا

Untitled-1

نیویارک: مسٹر بین کے کردار سے مشہور معروف مزاحیہ اداکار روون ایٹکنسن کے اچانک انتقال کی خبر نے ان کے مداحوں  کو نا صرف غم اور حیرت میں مبتلا کردیا بلکہ ان کا نقصان بھی کروادیا۔

سماجی رابطے کی مختلف ویب سائٹس پر گردش کرنے والی خبر یہ مداحوں کیلئے نہایت حیران کن تھی جس میں کہا گیا کہ ہالی ووڈ کے مشہور کردار مسٹر بین انتقال کر گئے۔

حیران و پریشان مداحوں نے جب مذکورہ خبر کو کھول کر تفصیلات جاننا چاہیں تو یکایک ایک خطرناک وائرس نے ان کے کمپیوٹرز پر حملہ کردیا، جس کے بعد کمپیوٹرز کو نقصان اٹھانا پڑا۔

یعنی یہ ایک کمپیوٹر وائرس تھا جسے جھوٹی خبر کی آڑ میں پھیلایا گیا تھا، یہ پہلا موقع نہیں جب مسٹر بین کے انتقال کی افواہیں پھیلی ہوں .

گزشتہ برس بھی ایک کار حادثے میں ان کی موت کی خبروں نے ان کے مداحوں کو ہلا کر رکھ دیا تھا، بعد ازاں یہ خبر جھوٹی نکلی۔

روون ایٹکنسن نے اپنے کیریئر کا آغاز 1978ء میں بی بی سی کے ریڈیو پروگرام دی ایٹکنسن پیپل سے کیا۔

اس کے بعد انہوں نے بی بی سی سے ہی ایک کامیڈی شو ناٹ دی نائن او کلاک نیوز پیش کیا۔ 1990ء میں انہوں نے دی ہیلپ لیس مسٹر بین کا پہلا کامیڈی شو پیش کیا۔ انہوں نے مسٹر بین کے بہت سے سیکوئیلز پیش کیے۔

1997ء میں مسٹر بین شو کے کردار کو لے کرڈائریکٹر میل اسمتھ نے فلم بنائی، جس کا نام ہی مسٹر بین رکھا گیا۔ مسٹر بین کی کامیڈی نے پوری دنیا کو اپنے حصار میں لئے رکھا اور بچوں، بڑوں سمیت دفتری کاموں میں مصروف اور تھکن سے چور لوگوں کے ہونٹوں پر ہنسی لائے اور ان کو انٹرٹین کیا۔

بشکریہ The Sun

loading...
loading...